My Trade Union

سندھ سوشل سیکورٹی میں غیر قانونی گورننگ باڈی نامنظور۔ عدالت میں چیلنج کریں گے ۔مزدور تنظیمیں
URDU

سندھ سوشل سیکورٹی میں غیر قانونی گورننگ باڈی نامنظور۔ عدالت میں چیلنج کریں گے ۔مزدور تنظیمیں

Aug 3, 2023

کراچی ۔(رپورٹ شاہد غزالی )
محکمہ محنت نے سندھ نے سندھ ایمپلائز سوشل سیکورٹی انسٹی ٹیوشن کی گورننگ باڈی کا نوٹیفکیشن نمبر
SO(L-II) 8-23/2016
مورخہ 2 اگست کو جاری کردیا ہے۔
اس مرتبہ بھی سیسی میں غیر قانونی گورننگ باڈی تشکیل دی گئی ہے۔
سندھ سوشل سیکورٹی ایکٹ 2016 کے تحت کسی بھی گورننگ باڈی کی تشکیل سے قبل سیکرٹری محنت قانونی طور پر پاپند ہے کہ محنت کشوں اور آجروں کی رجسٹرڈ فیڈریشن کی لسٹ ایک ماہ قبل جاری کرے گا جس کا سندھ گورنمنٹ سے گزٹ نوٹیفکیشن ہونا بھی ضروری ہے۔  بعدازاں ان نوٹیفائی فیڈریشن سے موصول ہونے والے نمائندوں کے ناموں میں سے گورننگ باڈی کے ممبران کو منتخب کیا جاتا ہے۔
اس قانونی عمل کی مکمل خلاف ورزی کرتے ہوئے موجودہ گورننگ باڈی تشکیل دی گئی ہے۔ اسی طرح موجودہ قانون کے مطابق ایک مرتبہ حیدرآباد اور دوسری مرتبہ سکھر سے اور ایک مرتبہ کوٹری سے اور دوسری مرتبہ نوری آباد سے نمائندگی لینا لازمی ہے۔ لیکن عبدالوحد شورو تیسری مرتبہ مسلسل حیدرآباد سے نامزد ہوئے ہیں۔ اس طرح سکھر کو مسلسل نمائندگی سے محروم کیا جارہا ہے۔اسی طرح خلیل بلوچ کو دوسری مرتبہ کوٹری سے نامزد کیا گیا ہے جبکہ اس مرتبہ نوری آباد سے نامزدگی ہونی تھی گذشتہ دو مرتبہ مسلسل ممبر گورننگ باڈی منتخب ہونے والے محمد خان ابڑو کو تیسری مرتبہ بھی محنت کشوں کے نمائندے کے طور پر ایک بار پھر نامزد کیا گیا ہے۔ جبکہ وہ صوبائی وزیر محنت سعید غنی کے کوآرڈینیٹر بھی ہیں، اس کے علاؤہ ریٹائرڈ سرکاری آفیسر بھی ہیں اور اسٹیٹ بینک آف پاکستان سے پینشن بھی لے رہے ہیں۔ اسی طرح ایسے گورننگ باڈی ممبران کو بھی منتخب کیا گیا ہے جن کا نام ایمپلائز یا ایمپلائر کی کسی بھی فیڈریشن نے سرے سے نامزد ہی نہیں کیا تھا اور نہ ہی کمشنر سوشل سیکورٹی کی جانب سے بھیجی جانی والی فائنل لسٹ (سمری) میں ان کا نام موجود تھا۔ سندھ بھر کی محنت کشوں کی فعال اور اہم فیڈریشنز نےاس متنازعہ اور غیر قانونی نومنتخب گورننگ باڈی سیسی کو عدالت میں چیلنج کرنے کا اصولی فیصلہ کرلیا ہے۔ اور جلد ہی اس سلسلے میں عدالت عالیہ میں ایک پٹیشن دائر کیجاے گئی

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *